مقبوضہ کشمیر فوجی چھاؤنی میں تبدیل

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی مقبوضہ کشمیرآمد کے خلاف حریت قیادت نے وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دی،کٹھ پتلی انتظامیہ نےاحتجاج کے خوف سے حریت رہنما یاسین ملک کو گرفتار جبکہ سید علی گیلانی،میرواعظ عمرفاروق اور دیگرکوگھروں میں نظربند کردیا۔
بھارتی وزیراعظم کی آمد پرسری نگر،جموں اور دیگرعلاقوں کو فوجی چھاؤنی میں بدل دیا گیا۔ جموں شہر میں15 سو سے زیادہ فوجی اہلکار تعینات کیے گئے۔ جگہ جگہ چیک پوائنٹس پر گاڑیوں اور لوگوں کی تلاشی لی گئی ۔
حریت قیادت کا کہنا ہے کہ موجودہ دور حکومت میں مقبوضہ وادی میں ظلم کا دور دورہ ہے۔ مودی کے حکم پر معصوموں کا لہو بے دریغ بہایا گیا،بصارتیں پیلٹ گنوں سے چھین لی گئیں، گھر آگ اور بارود کی نذر کردیئے گئے۔ ہزاروں جوان اور بزرگ قید و بند میں مبتلا کردیئے گئے اور نہتے کشمیریوں پرعرصہ حیات تنگ تر کردیا گیا۔ کشمیریوں کے حق خودارادیت کو رد کرکے قتل وغارت اور گرفتاریاں کرانے والے کا استقبال احتجاج سے ہی ہوسکتا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.