80 فیصد بھارتی اسلحہ چلنے کے قابل ہی نہیں

جب پاک بھارت تعلقات میں کشیدگی اپنے عروج کو پہنچی اور جنگ کا خطرہ بڑھتا ہوا محسوس ہوا تو بھارتی فوج دہائی دینے لگی کہ اس کے پاس موجود اسلحے میں سے 80 فیصد سے زائد ایسا ہے جو چلنے کے قابل ہی نہیں۔ اب ایک بار پھر بھارتی میڈیا پر فوج کے خراب اسلحے کا چرچا ہے اور بتایا جا رہا ہے کہ بھارتی فوج یہ اسلحہ چلانے سے ڈرنے لگی ہے کیونکہ خراب اسلحہ چلاتے ہوئے کئی حادثات ہو چکے ہیں اور متعدد فوجی جان سے بھی جا چکے ہیں۔ بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ میں چشم کشا انکشافات۔ اخبار کے مطابق”بھارتی فوج بارڈر پر خراب اسلحہ چلاتے ہوئے جانیں دے رہی ہے اور ہمارے سیاستدان سٹوڈیوز میں بیٹھ کر اپنی چھاتیاں تھپکتے نظر آتے ہیں۔” اخبار کے مطابق فوج نے متنبہ کر دیا ہے کہ خراب اسلحے کے باعث بڑی تعداد میں حادثات قطعی قابل قبول نہیں۔ حکومتی ادارے آرڈننس فیکٹری بورڈکی طرف سے جو گولہ بارود فوج کو دیا جا رہا ہے وہ انتہائی خراب اور ناقص معیار کا ہے۔ فوج نے وزارت دفاع کو بتا دیا ہے کہ اس خراب اسلحے اور گولے بارود کی وجہ سے فوجیوں کی جانیں جا رہی ہیں اور وہ عمر بھر کے لیے معذور ہو رہے ہیں۔ اس کے علاوہ جنگی سازوسامان بھی تباہ ہو رہا ہے اور یہ شرح انتہائی خطرناک حد کو پہنچ چکی ہے۔ اس کی وجہ سے فوج میں اعتماد کی انتہائی کمی واقع ہو چکی ہے اور فوجی یہ اسلحہ چلاتے ہوئے خوف کھانے لگے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.