چین کے ساتھ سرحدی کشیدگی میں پاکستان کا ہاتھ ہوسکتا ہے

0

سابق آرمی چیف کے مطابق کشمیر کے آئینی ڈھانچے میں تبدیلی بھی ایک وجہ ہو سکتی ہے،،، جنرل ریٹائرڈ وی پی ملک کا کہنا ہے کہ جب ہم نے جموں و کشمیرمیں آئینی تبدیلی کی تھی اور وہاں آئین کے آرٹیکل 35 اے کا نفاذ کیا تھا تو چین نے واضح الفاظ میں کہا تھا کہ یہ ان کو قابل قبول نہیں ہے، اس کی وجہ یہ تھی کہ چین کا پاکستان کے ساتھ سٹریٹیجک اشتراک ہے۔انڈیا کے سابق آرمی چیف جنرل ریٹائرڈ وی پی ملک کا کہنا ہے ان کے خیال میں چین اور انڈیا کے مابین سرحدی کشیدگی کو فوجی سطح پر حل کرنے کی کوششیں ناکام ہو چکی ہیں اور اب شاید یہ معاملہ سیاسی اور سفارتی سطح پر ہی حل ہو گا۔
سابق انڈین آرمی چیف کا کہنا ہے کہ ایسا نہیں ہے کہ پہلے اس نوعیت کے معاملات نہیں ہوئے ہیں مگر اس مرتبہ جو ہوا ہے وہ میرے خیال میں تکنیکی سطح پر نہیں ہوا بلکہ سٹریٹیجک سطح پر ہوا ہے تاہم چین نے ہمیں کوئی سرپرائز نہیں دیا کیونکہ ان علاقوں میں ہماری افواج ہمہ وقت تیار رہتی ہیں اور اب بھی تیار ہیں۔جنرل ریٹائرڈ وی پی ملک نےکہا کہ ایک ہی وقت میں اتنےوسیع سرحدی علاقے میں ایسا ہونا ایک مختلف بات ہے اور میرے خیال میں یہ کشیدگی ابھی کافی لمبی چلے گی اور اس معاملے کے حل تک سرحد کے دونوں اطراف فوجیں الرٹ رہیں گی اور ایسا کرنا پڑے گا۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: