مودی سرکارکے دیس میں مسیحا بھی غیرمحفوظ

انتہا پسند مودی کے دیس میں مسیحاؤں کی شامت آگئی،،،مریضوں کے لواحقین کے ہاتھوں بے دردی سے پٹنے والے ڈاکٹرزاورپیرامیڈیکل سٹاف نے اپنی جان بچانے کیلئےانوکھا حل تلاش کرلیا،،،بھارتی ڈاکٹرزاورپیرا میڈیکل سٹاف نے ہیلمٹ پہن کر اور سر پر طبی امداد مہیا کرنے والی پٹی باندھ کراپنی ڈیوٹی سرانجام دیں جبکہ مودی سرکار کیخلاف احتجاج بھی کرتے رہےآل انڈیا میڈیکل ہسپتال دہلی اورعثمانیہ ہسپتال سمیت بھارت تمام کے بڑے شہروں کے ہسپتالوں میں ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کا مودی سرکارسے مطالبہ تھا مریضوں کے ساتھ آنے والے اہل خانہ عملے کو تشدد کا نشانہ بناتے ہیں جب کہ کوئی بھی ڈاکٹرز جان بوجھ کر مریضوں کی جان نہیں لیتا، ڈاکٹرز کا کام جان بچانا ہوتا ہے جس کے لیے عملہ دن رات کام کرتا ہے جبکہ لواحقین اپنے پیاروں کی موت کا الزام دھر کرغنڈہ گردی کرتے ہیں۔لیکن مہاراج مودی کی جانب سے ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی جانب سے کیے جانے والے احتجاج پر تاحال کوئی نوٹس نہیں لیا گیا،،، اور نہ انہیں تحفظ فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.