پیپلزپارٹی نےآئی ایم ایف معاہدہ مسترد کردیا

خورشید شاہ نے پیشگوئی کرتے ہوئے کہا کہ عالمی مالیاتی ادارے سے ڈیل کے نتیجے میں مہنگائی کا خطرناک طوفان آئے گا،،،،منہ زور مہنگائی کا مقابلہ کرنے کیلئے تنخواہوں میں 50فیصد اضافہ کیا جائے ورنہ لوگ سڑکوں پر آجائیں گے
پیپلز پارٹی کی نائب صدر سینیٹر شیری رحمان کا آئی ایم ایف سے معاہدے پر رد عمل میں کہنا تھا کہ آئی ایم ایف اپنی ہی ٹیم سے مذاکرات کرکے واپس چلی گئی ہے۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدے پر پارلیمنٹ میں بریفنگ دی جائے اور بتایا جائے وزارت خزانہ کے اعلیٰ حکام ان مذاکرات میں کیوں شامل نہیں تھے؟ کن شرائط پر ملک اورادارے گروی رکھے جارہے ہیں؟
شیری رحمان نے کہا کہ حکومت ترقیاتی و فلاحی منصوبے بند کرنے جا رہی ہے،،،بجلی مہنگی کرنے کا ابھی سے اعلان کیا جارہاہے،،،معاہدے سے لگتا ہےمہنگائی کا ’سونامی‘ آنے والا ہے، کہیں یہ طوفان حکومت کو نہ لے ڈوبے۔
پیپلزپارٹی کی سیکریٹری اطلاعات نفیشہ شاہ کا اپنے ردعمل میں کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کونظر انداز کرکے آئی ایم ایف سے ڈیل مسترد کرتے ہیں، حکومت کو پارلیمنٹ آکر آئی ایم ایف سے ڈیل کی شرائط بتانا ہوں گی۔نفیسہ شاہ کا کہنا تھا کہ تبدیلی کا سونامی لانے والے مہنگائی کا سونامی لاچکے ہیں، پاکستان میں پی ٹی آئی ایم ایف کی حکومت ہے،جس کا سربراہ آئی ایم ایف خان ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.