معاشی مشکلات سے دوچار پاکستانی عوام کیلئے اچھی خبر

0
حکومت نے کرونا ریلیف پیکیج کے تحت بجلی کے بلوں میں ماہانہ اورسہ ماہی بنیادوں پر فیول ایڈجسٹمنٹ جون تک موخر کردی، قومی خزانے پر151ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا اقتصادی رابطہ کمیٹی نے منظوری دے دی جبکہ ای سی سی نے 4 سپلیمنٹری گرانٹس بھی منظور کرلیں ۔مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کی زیرصدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں نجی بینکوں سے 100 ارب روپے قرض لینے کی بھی منظوری دی تاکہ آئندہ چھ ماہ تک بجلی کے نرخ نہ بڑھانے کی صورت میں حکومتی نقصانات کا ازالہ کیا جاسکے اور تیل درآمدکنندگان کو زرمبادلہ کی شرح میں تبدیلی کا ازالہ کیا جاسکے۔اجلاس میں پاکستان اسٹیٹ آئل کو بیل آئوٹ پیکیج دینے کا بھی فیصلہ کیا گیا تاکہ اسے ڈیفالٹ ہونے سے بچایا جاسکے کیونکہ اس وقت پی ایس او کو 257 ارب روپے مختلف اداروں اور محکموں سے وصول کرنے ہیں۔کرونا ریلیف پیکیج سے300 یونٹ والے صارفین کو 22 ارب روپے تک کا ریلیف ملے گا، 4 سپلیمنٹری گرانٹس میں فیڈرل پبلک سروس کمیشن کیلئے 16 کروڑ روپے، پائیدار ترقی پروگرام کیلیے ایک ارب 70 کروڑ، سپیشل سکیورٹی ڈویژن جنوبی فیزون کیلیے 11ارب 48 کروڑ روپے اور سپیشل کمیونیکیشن آرگنائزیشن کیلیے 46 کروڑ 42 لاکھ روپے کی گرانٹ منظورکی گئی

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: