سابق ایرانی وزیر صحت نے کرونا کی ذمہ دار حکومت کو قرار دے دیا

ایران کے سابق وزیر صحت حسن قاضی زادہ ہاشمی نے انکشاف کیا ہے کہ انہوں نے گذشتہ دسمبر سے ہی ملک میں سینئر عہدیداروں کو کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے خطرے سے خبردار کر دیا تھا تاہم انہوں نے مثبت جواب نہیں دیا۔ہاشمی نے انسٹاگرام پر اپنی تحریر میں ایرانی حکام کو تنقید کا نشانہ بنایا کہ انہوں نے ملک میں جان لیوا وائرس کے بحران سے نمٹنے میں “بدترین بد انتظامی” کا مظاہرہ کیا۔ اس کے نتیجے میں کرونا ایک وبا بن کر پھیل گیا۔ہاشمی کے مطابق وہ گذشتہ دسمبر بلکہ نومبر کے اواخر سے ہی کرونا وائرس کے پھیلاؤ سے خبردار کر رہے تھے۔ ان کا کہنا ہے کہ ” میں نے اس وبا پر روک لگانے کے واسطے ایرانی صدر سمیت ملک میں سینئر ذمے داران کو تجاویز ارسال کیں۔کرونا وائرس کے باعث اب تک دنیا بھر میں 3 لاکھ 78 ہزار 846 افراد جان سے ہاتھ دھوبیٹھے جبکہ ایران میں مرنے والوں کی تعداد ایک ہزار 812 افراد ہوچکی ہے اس کے علاوہ 23 ہزار سے زائد ایرانی شہری اس جان لیوا مرض میں مبتلا ہیں۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: