چینی صدر کی اپیل پر ریسٹورنٹس مالکان کا اقدام

0

چین میں ریسٹورنٹس پر خوارک کو ضائع ہونے سے بچانے کے لیے شروع کی گئی قومی مہم کے تحت پالیسی بنائی تھی کہ ریسٹورنٹس میں داخل ہونے سے پہلے گاہکوں کا وزن چیک کیا جائے تاہم تنقید کے بعد ریسٹورنٹس انتظامیہ کو معافی مانگنا پڑی۔چینی صدر شی جن پنگ نے رواں ہفتے لوگوں سے اپیل کی تھی کہ خوراک کو ضائع مت کریں کیونکہ کرونا وائرس اور سیلابوں کی وجہ سے کھانے پینے کی اشیا کی قیمتیں بڑھ گئی ہیں
چینی صدر کی اپیل کے بعد ریسٹورنٹس کے باہر سائن بورڈ آویزاں کردیئے گئے جن پر لکھا تھا کہ "آپریشن خالی پلیٹ”جبکہ گاہکوں کو کہا گیا کہ وہ وزن کرنے والی مشین پر کھڑے ہوں اور اپنے وزن اور ڈشز کے مطابق ایپ میں ڈیٹا درج کریں۔اس کے بعد سوشل میڈیا پلیٹ فارم ویبو پر اس معاملے سے متعلق ہیش ٹیگز چلنا شروع ہو گئے جنہیں تین کروڑ لوگوں نے دیکھا۔عوامی حلقوں کی جانب سے شدید تنقید کے بعد ریسٹورنٹس مالکان نے اپنا فیصلہ واپس لیتے ہوئے گاہکوں سے معافی مانگ لی، ان کا کہنا تھا کہ ’ہمارا اصل مقصد خوراک کو ضائع ہونے سے بچانا تھا کیونکہ گروپس کی شکل میں ریسٹورنٹس آنے والے لوگ ضرورت سے زیادہ کھانا آرڈر کرتے ہیں جو بعد میں ضائع ہوجاتاہے۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: