کرونا وائرس کےبعد سوشل میڈیا پرافواہ سازفیکٹریوں کی بھرمار

سوشل میڈیا پر آج کل تین تصاویر کروناوائرس کے حوالے سے تیزی سے گردش کررہی ہیں۔ پہلی تصویر میں بہت سے تابوت دیکھے جاسکتے ہیں، کہتے ہیں کہ یہ اموات کرونا سے ہوئی ہیں، یہ بالکل غلط ہے، یہ 6 سال پرانی تصویر ہے اور یہ تابوت کشتی ڈوبنے سے مرنے والوں کے ہیں۔دوسری تصویر میں اٹلی کےوزیراعظم کو کرونا سے ہار مان کر روتا ہوا دکھایا گیا ہے،یہ تصویر بھی سوشل میڈیا پر بہت وائرل ہے جو کہ سراسر غلط ہے، یہ برازیل کا صدر ہے اور یہ قاسم سلیمانی کے واقعہ کے وقت رویا تھا۔تیسری تصویرمیں دکھایا گیا ہے کہ لوگ کرونا وائرس کی وجہ سے بازاروں میں مر رہے ہیں اور لوگ انہیں ہاتھ تک نہیں لگا رہے،اس میں کچھ حقیقت نہیں،،دراصل یہ 2014 کی تصویر ہے جس میں لوگ 1945 میں مارے گئے 528 افراد کی یاد میں آرٹ پروجیکٹ کر رہے ہیںان کے علاوہ جو جھوٹ گردش کر رہے ہیں کہ روسی صدر نے گلیوں میں شیر چھوڑ دیئے اور اٹلی میں اب زلزلہ آگیا۔ شیر والی تصویر جوہانسبرگ کی ہے جو 2016 کی ہے اور زلزلہ کروشیا میں آیا ہے۔
سمجھ نہیں آتی کہ یہ لوگ جھوٹ بول کر ثابت کیا کرنا چاہتے ہیں اور ان کی ان افواہوں کو بغیر تحقیق کے آگے بڑھا کر ہم بھی ان کےجھوٹ میں ہاتھ بٹا رہے ہیں۔ غلط پوسٹ کے ذریعےلوگوں کو ہراساں کرنے کے بجائے ان کا حوصلہ بڑھائیں،،احتیاط اور حفاظتی اقدامات کی تشہیرکریں ۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: