امریکی صدر نے جنگی اختیارات کم کرنے کی قرارداد ویٹو کر دی

0
قرارداد کی حمایت کرنے پر امریکی صدر نے اپنی ہی جماعت کے ارکان پر شدید تنقید کی۔ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ امریکی کانگریس کی قرارداد باعث توہین اور قانون و حقائق کے منافی ہے۔ امریکی صدر کا کہنا تھا کہ قرارداد میں امریکا کے دفاع سے متعلق مجھے حاصل آئینی اختیارات کی غلط تشریح کی گئی۔
اس سے قبل امریکی ایوان نمائندگان میں ایران کے ساتھ جنگ کے امکانات کو کم کرنے کےلیے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ایران سے جنگ کے اختیار کو محدود کرنے کی قرارداد منظور کرلی گئی تھی۔
قرارداد میں 1973 کے جنگی اختیارات کے قانون کا حوالہ دیا گیا،جس میں کانگریس کو امریکی صدر کی جنگ کے اختیارات کے استعمال کے متعلق جانچ کرنے کا اختیار دیا گیا ۔ قرارداد کے حق میں 224 جب کہ مخالفت میں 194 ووٹ پڑے۔ری پبلکن پارٹی کے 3 ارکان نے حق میں ووٹ دیا جبکہ ڈیموکریٹس کے 8 ارکان نے پارٹی کے برخلاف قرارداد کی مخالفت میں ووٹ دیا
اسی سلسلے میں امریکی سینٹ کے اراکین نے 55 حق اور 45 مخالف ووٹوں سے ایران کے خلاف امریکی صدر کے جنگی اختیارات محدود کرنے کے بل کی منظوری بھی دے دی تھی-امریکی سینٹ میں ڈموکریٹ کے سربراہ چک شومر اور ڈموکریٹ سینیٹر باب مننڈیز نے اپنے بیان میں ایران کے خلاف جنگ کے بارے میں ٹرمپ کے اختیارات محدود کرنے کے بل کی حمایت کی تھی۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: