روس میں ہوئی ڈالروں کی برسات

کہتے ہیں روپے نہ ہی درختوں پر اگتے ہیں اور نہ ہی آسمان سے برستے ہیں لیکن روس میں یہ بات اس وقت غلط ثابت ہوتی دکھائی دی جب ایک کانفرنس کے دوران شرکاء پر اچانک ڈالروں کی برسات ہونے لگی ۔سینٹ پیٹرز برگ کے گیزپروم ایرینا میں یہ کانفرنس روس کے معروف بزنس مین ایگور رائبیکوف کی جانب سے نوجوان تاجروں کی مدد کے لیے بلائی تھی اورکانفرنس کےد وران ہال کی چھت سے ایک ایک ڈالر کے 20 ہزار نوٹ شرکا پر برسائے گئےجن کی پاکستانی روپوں میں لاگت 30 لاکھ روپے بنتی ہے۔ نوٹوں کی بارش دیکھ کر سارے نوجوان ڈالر جمع کرنے میں لگ گئے۔ایگور اس وقت روس کے مالدار ترین تاجروں میں سے ایک ہیں۔ ان کے اثاثوں کا تخمینہ ڈیڑھ ارب ڈالر لگایا گیا ہے اور وہ درجنوں اداروں کے مالک ہیں تاہم سوشل میڈیا پر ڈالر نچھاور کرنے کے ان کے عمل پر تنقید کی گئی ہے لیکن ایگور کے مطابق یہ اچھا عمل ہے جس سے لوگوں کو خوشی ملی ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
1 تبصرہ
  1. amber shahzadi کہتے ہیں

    nice one

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.