کاش میں برطانیہ کے عوام کی بات مان لیتا

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کےمطابق ڈیوڈ کیمرون کاکہنا تھا کہ بریگزٹ کے لیے ریفرنڈم کے بعد ہونے والی تقسیم پر انہیں افسوس ہے جس میں عوام نے یورپی یونین سے علیحدگی کے لیے ووٹ دیا تھا۔ڈیوڈ کیمرون کا کہنا تھا کہ میں بریگزٹ ریفرنڈم کے نتائج کے حوالے سے ہر دن سوچتا ہوں اور اگلے قدم پر کیا ہوگا اس پر بہت پریشان ہوتا ہوں۔
ڈیوڈ کیمرون جون 2016 میں وزارت عظمیٰ سے مستعفی ہوگئےتھے کیونکہ وہ یورپی یونین سے برطانیہ کی علیحدگی کےمخالف تھے۔ کیمرون کے استعفے کے بعد تھریسامے برطانیہ کی وزیراعظم منتخب ہوئی تھیں تاہم وہ بریگزٹ کے معاہدے کو حتمی شکل دینے میں ناکام رہیں اور انہیں دو سال بعد ہی استعفیٰ دینا پڑا تھا۔تھریسامے کے بعد بورس جانسن برطانیہ کے نئے وزیراعظم منتخب ہوئےلیکن بریگزٹ کے معاملے پر بورس جانسن کو بھی مسلسل ناکامی کا سامنا کرنا پڑر ہا ہے۔ گزشتہ ماہ ملکہ ایلزبتھ سے بورس جانسن کی درخواست پرپارلیمنٹ معطل کرنے کی منظوری دی تاہم عدالت نے پارلیمنٹ معطلی کو غیرقانونی قراردے دیا جس سے بورس جانسن کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.