بیگناہوں کے خون سے ہولی کھیلنے والا درندہ انجام کےقریب

0
نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں گزشتہ سال مساجد میں فائرنگ کرنے والے 29سالہ دہشت گرد برینٹن ٹیرنٹ نے خود پر لگے 51 افراد کے قتل کے الزام کا اعتراف کرلیا۔برینٹن ٹیرنٹ نے ماضی میں ان الزامات کو مسترد کردیا تھا جس کے بعد رواں سال جون میں اس کے خلاف مقدمہ چلنا تھا تاہم کیس کی دوبارہ سماعت سے قبل ہی اس نے اپنے تمام جرائم کا اعتراف کرلیا۔ برینٹن ٹیرنٹ نے اپنے وکیل کے توسط سے آکلینڈ کی جیل سے ویڈیو کال کے ذریعے اپنے تمام جرائم کا اعتراف کیا۔اس دوران جج جسٹس کیمرون مینڈر کا کہنا تھا کہ اس بات کا دکھ ہے کہ کرونا وائرس کے باعث اس سانحے کا شکار ہونے والے ان خاندانوں کو ایسے وقت میں عدالت آنے کا موقع نہیں ملا جب ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف کیا۔جج کے مطابق دہشت گرد یکم مئی تک زیر حراست رہے گا جبکہ اس پر عائد 92 جرائم کی سزا اسے آئندہ پیشی پر سنائی جائے گی۔نیوزی لینڈ میں بھی اس وقت کورونا وائرس کے باعث لاک ڈاؤن ہے، یہی وجہ ہے کہ عوام کو عدالت آنے کی اجازت نہیں ملی جبکہ گزشتہ سال مساجد حملے میں زخمی ہونے والے ایک شخص کو اس سانحے کا شکار ہونے والے تمام افراد کی ترجمانی کے لیے عدالت آنے کی اجازت ملی

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: