متنازع سٹیزن شپ بل کے خلاف صحافتی برادری بھی سراپا احتجاج

0

بھارتی صحافی شیرین دہلوی نے ایوارڈ واپس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ وہ پناہ گزینوں کو شہریت دینے کے خلاف نہیں،بلکہ وہ یہ بات نہیں سمجھ پارہیں کہ اس قانون میں سے ایک کمیونٹی کو کیوں خارج کیا گیا ہے۔ شیرین دہلوی نے جو اعزاز واپس کیا ہے وہ اسپشل پرائز ایوارڈ انھیں 2011میں مہاراشٹر اسٹیٹ اردو ساہیتیہ اکیڈمی نے دیا تھا۔متنازع مسلم مخالف بل پاس ہونے کے بعد گزشتہ روز بھارتی ریاست مہاراشٹرا میں تعینات آئی جی رینک کے اعلیٰ پولیس افسر عبدالرحمان نے سول نافرمانی کرتے ہوئے احتجاجاً عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا ۔ بھارتی پولیس سروس کے اعلیٰ افسر کا کہنا تھا کہ شہریت سے متعلق متنازع بل میں واضح طور پر مسلمانوں کے ساتھ امتیازی سلوک برتا گیا ہے۔دو روز قبل بھارتی راجیہ سبھا میں منظور ہوا۔ اس سے قبل حیدرآباد دکن سے تعلق رکھنے والے بھارتی پارلیمنٹ کے شعلہ بیان مقرر اسد الدین اویسی نے سٹیزن شپ ترمیمی بل کی مذمت کرتے ہوئے مسودے کی کاپیاں پارلیمنٹ میں پھاڑ ڈالی تھیں۔اس کے علاوہ کانگریسی رہنما اور سابق مرکزی وزیر ششی تھرور نے بھی لوک سبھا میں متنازع بل کی مذمت کی تھی اور کہا تھا کہ سٹیزن شپ ترمیمی بل کی منظوری محمد علی جناح کی گاندھی کے مقابلے میں فتح ہے۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: