بھارت کے تعلیمی اداروں میں بھی مسلمان مخالف ذہنیت بڑھنے لگی

0
بہار کے دارالحکومت پٹنا میں واقع گورنمنٹ جے ڈی ویمن کالج کی انتظامیہ نے مسلمان طالبات کے لیے سرکلر جاری کیا جس میں ان کویونیورسٹی میں بغیر برقع آنے کی تاکید کی گئی ۔انتظامیہ نے جاری کیے گئے سرکلر میں کہا کہ کالج کی حدود میں کسی بھی لڑکی کو برقع پہننے کی اجازت نہیں ہوگی اور پابندی کی خلاف ورزی کرنے والی طالبات پر جرمانہ عائد کیا جائے گا۔کالج انتظامیہ کے اس اقدام پر جس پر مسلم برادری اور شہر کے معززین کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آیا اور طالبات نے بھی اس متنازعہ حکم کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ معاملہ جب سوشل میڈیا تک پہنچا تو کالج انتظامیہ کو اپنا فیصلہ واپس لینا پڑا۔کالج انتظامیہ نے اپنے وضاحتی بیان میں کہا ہے کہ برقع پہننے پر پابندی غلط فہمی کا نتیجہ تھی، ہم نے ایک ڈریس کوڈ وضع کیا تھا جس کے تحت تمام طالبات کو کالج کے مقرر کردہ ڈریس کوڈ کے مطابق آنا ہوگا۔ ڈریس کوڈ کا مقصد کسی مخصوص گروہ کو نشانہ بنانا نہیں بلکہ طالبات میں یکسانیت پیدا کرنا تھی۔دوسری جانب طالبات کے والدین نے کالج نوٹس دکھایا جس میں واضح طور پر برقع پہن کر کالج نہ آنے کی ہدایت اور خلاف ورزی پر 250 روپے جرمانہ عائد کرنے کی دھمکی دی گئی تھی ۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: