برطانیہ کاعراق اورافغانستان کی قدیم نوادرات واپس دینےکااعلان

افغانستان بھیجے جانےوالی نوادرات میں گندھارا دور کےمجسمے شامل ہیں جو2002 میں غیر قانونی طریقے سے برطانیہ بھیجے گئے تھے۔اس کے علاوہ عراق واپس بھیجے جانے والی نوادارت میں بین النہرین کی قدیم تہذیب میں مٹی پرکھودی گئیں 154 تحریریں شامل ہیں جو رسم الخط کے ابتدائی دور کی نشانی ہے،انہیں 2011 میں قبضے میں لیا گیا تھا
قدیم تہذیب کی یہ تحریریں قبل مسیح چھٹی اور چوتھی صدی کے درمیان لکھی گئی تھیں جن میں سے اکثر کا تعلق اریسا گرگ سے ہے یہ مقام 2003 میں اس وقت دریافت ہوا جب اسکے نوادارت زمینی سطح پر ظاہر ہوئی تھیں۔برطانوی حکام کا کہنا ہے کہ برٹش میوزیم عراق اور افغانستان سے لائی گئی نوادرات کی شناخت اور ان کی واپسی کے لئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ کام کر رہا ہے اوریہ تمام اشیاء حیران کن ہیں۔ یہ نوادرات بغداد میں واقع عراق میوزیم کے حوالے کی جائیں گی جو عراق کے سٹیٹ برائے آثار قدیمہ و ورثہ کا حصہ ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.