بارباڈوس کا سابق برطانوی کالونی سے علیحدگی کا اعلان

0
برطانوی نشریاتی ادارے ” بی بی سی” کی رپورٹ کے مطابق کیریبین جزیرے کی حکومت نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ ہم اپنے نوآبادیاتی ماضی کو مکمل طور پر پیچھے چھوڑ دیں۔ اس حوالے سے وزیراعظم میا موٹلی کی جانب سے لکھی گئی تقریر میں کہا گیا کہ بارباڈوس کے شہری ایک بارباڈوسی ریاستی سربراہ چاہتے ہیں۔بارباڈوس کے وزیر اعظم کے تحریرکردہ اس بیان کو گورنر جنرل نے پڑھ کر سنایا جس میں کہا گیا ہے کہ یہ اعتماد کے حوالے سے حتمی بیان ہے کہ ہم کون ہیں اور ہم کیا حاصل کرنے کے اہل ہیں جبکہ بارباڈوس آئندہ برس نومبر میں برطانیہ سے آزادی کی 55 ویں سالگرہ منانے کی تیاریاں کررہا ہے ۔دوسری جانب بکھنگم پیلس نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ یہ حکومت اور بارباڈوس کے عوام کا معاملہ ہے۔ بکھنگم پیلس ذرائع کے مطابق یہ خیال ٖغیر متوقع اور اچانک نہیں اور اس حوالے سے عوامی سطح پر متعدد مرتبہ بات چیت کی گئی ہے جبکہ یہ بیان پارلیمنٹ کے نئے سیشن کے آغاز پر کی گئی تقریر کا بھی حصہ تھا ۔بارباڈوس کیریبین میں سابق برطانوی کالونی سے علیحدہ ہونے والا پہلا ملک نہیں ہوگا بلکہ اس سے قبل1970 میں برطانیہ سے آزادی حاصل کرنے کے 4 سال سے کم عرصے میں گیانا نے یہ اقدام اٹھایا تھا، اس کے بعد 1976 میں ٹرینیڈاڈ اور ٹوباگو جبکہ ڈومینیکا نے 1978 میں برطانیہ سے اپنے راستے جدا کئے تھے ۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: