پی اے سی ارکان چیئرمین کوہٹا نہیں سکتے،سابق سپیکرقومی اسمبلی

سردار ایاز صادق نے واضح کیا کہ پی اے سی کو ہٹانے کیلئے مقررہ طریقہ کار کی غیر موجودگی میں ارکان کیلئے ممکن نہیں کہ وہ چیئرمین کو ہٹا سکیں، قومی اسمبلی کے رولز آف بزنس میں کسی بھی کمیٹی کے چیئرمین کے خلاف عدم اعتماد کیلئے کوئی طریقہ کار مقرر نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ کوئی بھی وفاقی وزیر اس وقت تک پی اے سی کا ممبر نہیں بن سکتا جب تک اس کے پاس وزارت ہے اور یہ عمل 2002 سے جاری ہے۔
ایاز صادق کا کہنا تھا کہ ایک مرتبہ کوئی جماعت اپنے رکن کو پی اے سی کا رکن نامزد کردے تو اسے وہ جماعت حتیٰ کہ سپیکر قومی اسمبلی بھی نہیں نکال سکتا،رکن اپنی مرضی سے تحریری صورت میں کمیٹی سےعلیحدہ ہوسکتا ہے۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ پی اے سی سمیت کسی بھی کمیٹی کے چیئرمین کے خلاف تحریک عدم اعتماد کیلئے کوئی بھی رولز آف پروسیجر دستیاب نہیں جبکہ پی اے سی بھی انہی قوانین کی پابند ہے جو دیگر کمیٹیوں پرعائد ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.