ممتاز قانون دان عاصمہ جہانگیر کی پہلی برسی

جرات مند خاتون عاصمہ جہانگیر ستائیس جنوری انیس سو باون کو لاہور میں پیدا ہوئیں۔ انہوں نے پنجاب یونیورسٹی سے قانون کی ڈگری حاصل کی، انیس سو اسی میں لاہور ہائی کورٹ اور انیس سوبیاسی میں سپریم کورٹ سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔وہ سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی پہلی خاتون صدر بھی منتخب ہوئیں۔
عاصمہ جہانگیرپاکستان میں حقوقِ انسانی کی علمبردار اور سکیورٹی اداروں کی ناقد کے طورپرپہچان رکھتی تھیں۔حقوق کی جدوجہد کی پاداش میں انھیں کئی بار جیل اور نظر بندی کی سزا سنائی گئی۔
ضیا دورحکومت میں وہ جیل گئیں اور مشرف دور میں انہیں نظربند کیا گیا۔ عاصمہ جہانگیر نے عدلیہ بحالی کی تحریک میں بھی اہم کردار ادا کیا ۔انھوں نے ہیومن رائٹس کمیشن اور ویمنز ایکشن فورم کی بنیاد بھی رکھی۔
عاصمہ جہانگیر کو پاکستان میں ہلالِ امتیاز اور ستارہ امتیاز سے نوازا گیا جب کہ اقوام متحدہ نے سال 2018 کے لیے انسانی حقوق کا ایوارڈ مرحومہ کے نام کیا۔عاصمہ جہانگیر نے ایران میں اقوام متحدہ کی نمائندہ خصوصی برائے انسانی حقوق اور مذہبی آزادی کی حیثیت سے بھی کام کیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.