افغان صدر کی طالبان کو افغانستان میں دفتر کھولنے کی پیشکش

افغان صدر اشرف غنی کا کہنا ہےکہ طالبان کو کابل، قندھار یا ننگرہارسمیت کہیں بھی دفتر کھولنے کی اجازت دی جا سکتی ہے جس کا مقصد افغانستان میں پائیدار امن کی جانب مثبت قدم اٹھانا ہے۔
افغان صدر کی پیشکش پر ردعمل میں طالبان قطر دفتر کے ترجمان سہیل شاہین کا کہنا ہےکہ طالبان کے سرکاری سیاسی دفترکا مطالبہ واضح ہے، طالبان دوحا سیاسی دفتر کے لیے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی حمایت چاہتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ افغان صدر کی اصل بات سے ہٹ کر کی گئی پیشکش امن کے لیے جاری کوششوں کو نقصان پہنچانے کی کوشش ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.