نیتن یاہو کا وادی اردن میں یہودی بستیاں بنانے کا اعلان

اسرائیلی وزیر اعظم نے وادی اردن میں یہودی بستیاں بنانے کا اعلان کرتے ہوئےکہاکہ الیکشن جیت گیا تو مغربی کنارے میں واقع وادی اردن میں یہودیوں کی آبادکاری کرکے دکھاؤں گا۔ادھر اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے اس بیان پر عرب لیگ اور ترکی بھی میدان میں آگئے اور انہون نے نیتن یاہو کی جانب سےوادی اردن میں یہودی بستیاں بنانے کے اعلان کی مذمت کرتے ہوئے بیان کو نسل پرستانہ قرار دے دیا۔عرب لیگ نےنیتن یاہو کےاعلان کو غیرسنجیدہ اور غیرذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئےاپنےردعمل میں کہاکہ اسرائیلی وزیراعظم کو ایکشن جیتنے کیلئےایسے بیانات دینے سےگریز کرنا چاہئے کیونکہ ایسے اقدامات سے خطے کا امن متاثر ہو گا
ادھرترکی کے وزیر خارجہ نےسوشل میڈیا پربیان میں کہاہےکہ اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو الیکشن سے پہلے ہر طرح کے غیر قانونی اور جارحانہ بیانات دے رہے ہیں۔ میولت چاؤش اولو نے کہا کہ الیکشن جیت کر وادی اردن میں یہودی بستیاں بنانے کا نیتن یاہو کا وعدہ نسلی عصبیت کی نشاندہی کرتا ہے۔ ہم آخر دم تک اپنے فلسطینی بھائیوں کے حقوق اور مفادات کا دفاع کرتے رہیں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.