افغان لڑکیوں کا حیرت انگیز کارنامہ

0

جہاں کرونا دنیا بھرمیں خوف و دہشت کی علامت بنا ہوا ہے وہیں کچھ لوگ اپنی ہمت اور ذہانت کے بل بوتے پر اس وبا سے نمٹنے کیلئے اپنی بھرپور صلاحیتوں کا بھرپور مظاہرہ کررہے ہیں،کچھ ایسا ہی کام افغانستان کی پانچ نوجوان انجینیئر لڑکیوں نےکیا جنہوں نے پرانی گاڑی کے پرزوں کو جوڑ کر بہت کم قیمت اور سادہ سا وینٹیلیٹر تیار کرلیا ۔فیمل روبوٹک ٹیم کی سربراہ انجینیئر رویا محبوب کا کہنا ہے کہ یہ وینٹیلیٹر کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے بنایا گیاہے ، ہماری ٹیم میں 14 سے 17 سال کی پانچ لڑکیاں شامل ہیں ، جن کا تعلق ٹیکنیکل طلبا کی ایک ٹیم سے ہے، جو "افغان خواتین کے خواب” کے نام سے مشہور ہے۔رویا محبوب نے مزید کہا کہ ہماری ٹیم مقامی صحت کے ماہرین اور ہارورڈ یونیورسٹی کے ماہرین کے ساتھ مل کر میسا چوسٹس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے ڈیزائن کی بنیاد پر پروٹو ٹائپ تیار کرنے کیلئے کام کررہی ہے۔افغان انجینئیرز لڑکیوں کا کہنا ہے کہ عالمی ادارہ صحت اور وزارت صحت نے ٹیم کے پروٹو ٹائپ کو منظوری دے دی تو اسے کم از کم 300 ڈالرز میں تیار کیا جاسکتا ہے۔

 

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: