کہیں بادل،کہیں بارش،پہاڑوں پر برفباری

ملک بھر میں سردی کی شدید لہر برقرار ہے۔ پنجاب اور خیبرپختونخوا کے بیشتر علاقوں میں بادلوں کی آنکھ مچولی نے سردی کی شدت میں مزید اضافہ کر دیا۔ محکمہ موسمیات نے میدانی علاقوں میں وقفے وقفے سے رم جھم کا سلسلہ جاری رہنے کی پیش گوئی کی ہے۔ بارش سے سردی کی شدت میں اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔
پہاڑی علاقوں میں برف باری کے رنگ نظر آنے لگے، مری اور گلیات میں آسمان سے سفید موتی برس پڑے۔ مری میں برفباری ہوتے ہی سیاحوں کا رش لگ گیا۔ شہریوں نے چھٹی کے روز برفباری کا لطف اٹھانے کیلئے ملکہ کوہسار کا رخ کر لیا۔ گلیات میں روئی کے گالوں نے سیاحوں کا مزہ دوبالا کردیا۔ لوگوں نے نتھیا گلی اور ٹھنڈیانی کا بھی رخ کرلیا۔
سوات میں وادی کالام سمیت اتڑور، گبرال اور مہوڈنڈ جھیل کے علاقوں نے سفید چادر اوڑھ رکھی ہے۔ کئی علاقوں کا زمینی رابطہ منقطع ہے، اپر دیر میں بیلو خوڑ روڈ جبکہ قادر کلے پر رابطہ سڑک بھی ٹریفک کیلئے بند ہے۔ چترال کے لواری ٹنل ایریا میں بھی برفباری کے باعث لوگ مشکل میں ہیں۔
بلوچستان میں شدید بارشوں سے ندی نالوں میں طغیانی آ گئی۔ صوبے کے کئی اضلاع میں ایمرجنسی کنٹرول روم قائم کر دئیے گئے۔ پنجگور میں ندی نالوں میں طغیانی سے کئی علاقوں کا زمینی رابطہ منقطع ہو گیا۔ ڈی سی پنجگور نے شہریوں کو غیر ضروری سفر نہ
کرنے کی ہدایت جاری کر دی۔ چاغی میں بھی پاک ایران شاہراہ پر ہیوی ٹریفک کو روک دیا گیا۔ لیویز فورسز متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیوں میں مصروف ہیں۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.