کہا تھا چیئرمین نیب کی کیامجال،سب حکومت کرتی ہے،زرداری

نیب نے گزشتہ روز اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے آصف زرداری کی مستقل ضمانت کی درخواست مسترد ہونے پر انہیں زرداری ہاؤس سے گرفتار کیا تھا۔ نیب نے سابق صدر کو احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ اس موقع پر نیب اور احتساب عدالت کے باہر سیکیورٹی کے سخت انتظامات تھے۔ دورانِ سماعت پراسیکیوٹر نیب مظفر عباسی نے مؤقف اختیار کیا کہ ملزم سے مزید تفتیش کیلئے ریمانڈ کی ضرورت ہے۔ جج ارشد ملک نے استفسار کیا آصف زرداری کو کن بنیادوں پر گرفتار کیا پہلے یہ بتائیں جس پر پراسیکیوٹر نیب نے کہا میں گرفتاری کی بنیاد پڑھ کر بتا دیتا ہوں۔
احتساب عدالت میں میڈیا سے غیررسمی گفتگو میں سابق صدر نے کہا میں نے کہا تھاچیئرمین نیب کی کیا مجال،سب حکومت کرتی ہے،گرفتاری تیسری دنیامیں جمہوریت کاحسن ہے،سلیکٹڈ وزیراعظم کو کچھ معلوم نہیں سب کچھ وزیرداخلہ کرارہا ہے،انہوں نے اپنی گرفتاری کوپریشرٹیکٹکس قراردیدیا۔نیب نے احتساب عدالت سے آصف زرداری کے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی احتساب عدالت نے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے سابق صدر کا 10 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے انہیں نیب کے حوالے کردیا۔عدالت نے آصف زرداری کو 21 جون کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.