کشمیریوں کوانسانیت سوزمظالم سہتے223 روزہوگئے

0

وادی کشمیر میں بھارت کی طرف سے مسلط کردہ غیر انسانی لاک ڈاؤن اور مواصلاتی بندش کے باعث مسلسل223 ویں روز بھی معمولات زندگی بدستور مفلوج ہیں۔ سڑکیں سنسان ، وادی میں دکانیں، کاروبار، تعلیمی مراکز بند ہیں اور لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے .
قابض بھارتی فوج نے کشمیریوں کی زندگی اجیرن بنا دی ۔وادی میں نام نہاد سرچ آپریشن کی آڑ میں پکڑ دھکڑ کا سلسلہ بھی جاری ہے۔وادی میں خوراک اور ادویات کی قلت بھی برقرار ہے اور بھارتی غاصب فورسز کی جانب سے مظالم کی شدت میں مزید اضافہ بھی کر دیا گیا ۔ وادی میں موبائل فون، انٹرنیٹ سروس بند اور ٹی وی نشریات تاحال معطل ہیں۔کشمیر میں سب سے بڑا انسانی المیہ جنم لے چکا ہے مگر سپر پاور کے دعویداروں یا انسانی حقوق کے علمبردار سب خاموش ہیں،تجارتی مفادات کو انسانیت پر ترجیح دی جا رہی ہےجس سےعدم توازن ناانصافی اور شدت پسندی جنم لے رہی ہے اس دہرے معیار کو امریکہ، اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے اداروں نے ختم نہ کیا تو دُنیا کا امن تہہ و بالا ہو جائے گا۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: