کرونا ویکسین کی تیاری کی دوڑ چین جیتنے کے لیے تیار

0
چین دنیا میں کرونا ویکسین متعارف کرانے والا پہلا ملک بن سکتا ہے۔ برطانوی روزنامے ٹیلیگراف کی رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں 9 کرونا ویکسینز ٹرائلز کے تیسرے اور آخری مرحلے سے گزر رہی ہیں اور ان میں سے 4 چین کی ہیں جبکہ چین کی جانب سے حالیہ دنوں میں کرونا ویکسین کے حوالے سے کئی مثبت اعلانات کیے گئے ہیں
بائیو میڈیکل تھنک ٹینک پالیسی کیورز ریسرچ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر ویپول چوہدری کے مطابق چین کرونا ویکسینز میں غیرفعال کووڈ 2 وائرس استعمال کررہا ہےجو کہ اس وبا کی روک تھام کے لیے ممکنہ طور پر بہترین طریقہ کار ہوسکتا ہے۔ فلاڈلفیا کے چلڈرنز ہسپتال کے ویکسین ایجوکیشن سینٹر کے ڈائریکٹر ڈاکٹر پال اوفیٹ بھی اس رائے سے متفق ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ اس سےکرونا وائرس کے تمام پروٹینز کے خلاف مدافعتی ردعمل بنانے میں مدد مل سکتی ہے۔رواں ہفتے چائنا نیشنل بائیوٹیک گروپ نے اپنی 2 ویکسینز کے تیسرے مرحلے کے ابتدائی ڈیٹا کے بارے میں اعلان کیا تھا کہ وہ رضاکاروں میں کووڈ 19 سے بچانے کے لیے موثر ثابت ہوئی ہیں۔ گروپ کے سیکرٹری زاؤ سونگ کے مطابق ویکسین سے ایک فرد کو ممکنہ طور پر 3 سال تک کرونا وائرس سے تحفظ مل سکے گا۔
چین کی جانب سے کامیاب ویکسین کو دیگر ممالک کو بھی فراہم کرنے کے وعدے کیے گئے ہیں اور چینی کمپنیوں کی جانب سے وہاں ویکسین کے ٹرائلز بھی کیے جارہے ہیں۔ ادھر ویکسین کی بڑی تعداد میں تیاری کیلئے ایک نیا کارخانہ تعمیر کیا جارہا ہے جبکہ سینوویک کی جانب سے بھی بیجنگ میں ایک نیا پلانٹ تعمیر کیا جارہا ہے جو سالانہ 30 کروڑ ڈوز تیار کرسکے گا۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: