کراچی،2018 میں بھی اسٹریٹ کرمنل کو لگام نہ ڈالی جاسکی

اسٹریٹ کرائم پر قابوپانے کے دعوے اس سال بھی دھرے کے دھرے رہ گئے ،،،سنسان گلی موبائل سنیچر کی پسند ترین جگہ ،،،، کراچی والے پہلے سنسان سڑکوں سے گزرتے ہوئے ڈرتے تھے لیکن اب کہتے ہیں کہ سناٹے سے نہیں لٹیروں سے ڈر لگتا ہے سال 2018 میں دہشتگردی میں تو کمی آئی لیکن اسٹریٹ کرمنل کو لگام نہ ڈالی جاسکی،،، خوفزدہ شہریوں نے مہنگے موبائل کا استعمال چھوڑدیا
ناظم آباد، کلفٹن شاہ فیصل ، ایف بی ایریاسمیت بیشتر علاقے لٹیروں کی جنت بنے رہے اورموبائل فونز چھنتے رہے سی پی ایل سی رپورٹ کے مطابق 2018 میں19 ہزار786 سے زائد موبائل چوری اور14 ہزار 402 سے زائد چھینے گئے، ایڈیشنل آئی جی کراچی بھی اعتراف کرتے ہیں کہ وارداتوں میں6 فیصد اضافے ہوا ہے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.