پی آئی اے نجکاری اور خسارہ کیس کی سماعت

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پی آئی اے نجکاری اور خسارہ کیس کی سماعت کی۔ پی آئی اے وکیل نعیم بخاری نے آگاہ کیا کہ پی آئی اے پر 426 ارب روپے کا قرض ہو گیا، نئی انتظامیہ قومی ائیر لائن کی بحالی اور خسارہ کم کرنے کیلئے کوشاں ہے ۔
چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ پی آئی اے کی بساط نہیں تھی تو قرض کیوں لیا۔ ائیر لائن کی نجکاری کی خبریں قومی ادارے کیساتھ مذاق ہے،ریاستی ادارے کو بند ہونے نہیں دینگے۔ چیف جسٹس گلزار احمد نے پی آئی ایے ملازمین کی جعلی ڈگری سے متعلق مقدمات پر ریمارکس دئیے کہ جعلی ڈگری والے جہاز چلا رہے ہیں انہیں ایک ایک کر کے نکالیں گے۔
سپریم کورٹ نے پی آئی اے ملازمین کی جعلی ڈگری سے متلعق مقدمات کی تفصیل طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت ایک ماہ کیلئے ملتوی کر دی گئی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.