پیراگون ہاؤسنگ کیس:سعد رفیق اور سلمان رفیق کی ضمانت منظور

0

جسٹس مقبول باقر کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کیس کی سماعت کی۔ دوران سماعت خواجہ برداران کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے نیب کا الزام ہے کہ لوگوں کو الاٹمنٹ نہیں دی گئی جبکہ پیراگون نے 68 سے 62 افراد کے کیس سیٹلڈ کر دیئے ہیں۔
وکیل صفائی نے کہا کہ میرے دونوں موکلوں کو 11 جولائی 2018 کوگرفتار کیاگیا اور 6ماہ گرفتاری کے بعد 30 مئی 2019 کو ریفرنس داخل کیاگیا جس پر ستمبر 2019 کو فرد جرم عائد کی گئی جبکہ 122 گواہ مقرر کئے گئےلیکن صرف5 گواہوں کے بیانات قلمبندہوئے۔ جسٹس مقبول باقر نے استفسارکیاکہ سوسائٹی کاپلان کس نے منظورکیا؟،وکیل نے کہاکہ یہ سوسائٹی ٹی ایم اے سے منظورشدہ ہے۔
جسٹس مقبول باقر نے استفسار کیاکہ سوسائٹی میں شاملات کی اراضی کتنی ہے؟،وکیل نےکہاکہ 7200کنال اراضی میں صرف39کنال شاملات میں شامل ہے۔ جسٹس مظہر عالم نے کہا کہ ایک طرف کہتے ہیں خواجہ برادران کا پیراگون سے تعلق نہیں،دوسری جانب پیراگون اورخواجہ برادران زمینوں کا تبادلہ کررہے ہیں ۔ وکیل صفائی نے کہا کہ سعد رفیق نے 50 کنال زمین کے عوض پیراگون سے 40 کنال اراضی لی۔
سپریم کورٹ نےدلائل سننے کے بعد اپنے ریمارکس میں کہا کہ نیب کے پاس ضمانت خارج کرانے کی کوئی بنیاد نہیں، نیب نے شاملات کی زمین کے پلان میں خلاف ورزی کا الزام نہیں لگایا۔عدالت خواجہ برادران کی درخواست ضمانت منظورکرتے ہوئے30،30لاکھ روپے کے 2مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا ۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: