پاکستان نے گیند پھر بھارت کی کورٹ میں پھینک دی

اپنےایک بیان میں وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ بھارت تو امریکا کو اپنا اسٹریٹیجک پارٹنر کہتا ہے، مگر آج وہ اپنے ہی اسٹریٹیجک پارٹنر پر شک و شبے کا اظہار کررہا ہے، بھارت ایک طرف تو کہتا ہے کہ مذاکرات صرف دو طرفہ ہو سکتے ہیں، تو پھر وہ پاکستان کے ساتھ مذاکرات کی میز پر کیوں نہیں بیٹھتا۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ کہا کہ ثالثی کے لیے انہیں خود بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا ہے، بھارت پاکستان سے دو طرفہ مذاکرات کرنا چاہتا ہے یا ثالث کے ذریعے، ہم دونوں کے لیے تیار ہیں۔
واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عمران خان سے ملاقات میں کہا تھا کہ بھارتی وزیر اعظم نے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیش کش کی تھی، دوسری جانب بھارتی حکومت اس بات کو ماننے سے انکار کر رہی ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ کے مشیر لیری کڈلو سے کشمیر پر ثالثی سے متعلق امریکی صدر کے بیان کے بارے میں استفسار کیا گیا تو انہوں نے واضح الفاظ میں کہا کہ امریکی صدر خود سے کوئی بات نہیں گھڑتے، ٹرمپ نے جو کہنا تھا وہ کہہ دیا ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: