پاکستان تیزی سے خوراک کی کمی کاشکار

پاکستان میں غریب عوام کی مسیحائی کادعویٰ کرنے والوں کی کارکردگی کا پول کھل گیا،بعض افریقی اورایشیائی ممالک کی طرح پاکستان بھی خوراک کی کمی کا شکارہوگیا۔اس حوالے سے وزارت نیشنل ہیلتھ سروسزنے“نیشنل نیوٹریشن سروے 2018″ جاری کردیا ہے جس میں ہوشربا انکشافات سامنے آئے ہیں۔سروے کے مطابق پاکستان میں ہر10 میں سے 4 بچےغذائی کمی کا شکار ہیں، ایسے بچوں کی تعداد 40.5 فیصد ہے جن میں لڑکوں کی تعداد 40.9 فیصد اور لڑکیوں کی تعداد 39.4 فیصد ہے۔سروے سے پتہ چلا کہ ملک میں ہر تیسرا بچہ وزن کی کمی کا بھی شکار ہے جبکہ 9.5 فیصد بچوں کا وزن زیادہ ہے، 7 سال کے دوران وزن کی زیادتی کا شکار بچوں کی تعداد دگنی ہوئی ہے۔
سروے میں مزید بتایا گیا کہ پاکستان میں 36.9 فیصد آبادی کوغذائی قلت کا سامنا ہے، اس حوالے سے بلوچستان اور فاٹا سب سے زیادہ متاثر ہیں۔ بلوچستان کی 50 فیصد آبادی جبکہ فاٹا میں 54.6 فیصد آبادی غذائی قلت کاشکارہے۔
ایک رپورٹ کے مطابق بڑے ممالک پوری دنیا کے80فیصد سے زائد وسائل پرقابض ہیں،جن میں خوراک بھی شامل ہے، یہ ممالک ان وسائل کابیدردی سےاستعمال کررہےہیں،جس سے ترقی پذیرممالک میں ہرگزرتےدن کےساتھ معیارزندگی گرتاجارہاہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.