وزارت قانون نے نیب قوانین میں ترمیم کیلئے مسودہ تیار ،ذرائع

نیب قانون میں ترمیم کیلئے وزارت قانون نے مسودہ تیار کرلیا،،،ذرائع کے مطابق نیب ایک مرتبہ تحقیق کرنے کے بعد مقدمہ دوبارہ نہیں کھول سکے گا،،، محکمانہ نقائص پر سرکاری ملازمین کے خلاف نیب کارروائی نہیں کرے گا،،،تاہم ایسے ملازمین کے خلاف کارروائی ہوگی جن کے خلاف شواہد ہوں گے،،اس کے علاوہ نیب 50 کروڑ سے زائد کی کرپشن اور سکینڈل پر کارروائی کرے گا
نئے نیب قوانین میں لوٹی گئی رقوم کی رضاکارانہ واپسی کی منظوری وزیراعظم کی قائم کردہ کمیٹی دے گی،،، پلی بارگین اور رضاکارانہ واپسی کرنے والا ملزم 10 سال کے لیے عوامی عہدے سے نااہل تصور ہوگا،،،،
ذرائع کے مطابق 3 ماہ میں نیب تحقیقات مکمل نہ ہوں تو گرفتار سرکاری ملازم ضمانت کا حقدار ہوگا،،، اگر نیب سرکاری ملازم کو گرفتار کیا گیا تو 90 کی بجائے 45 روزہ ریمانڈ ہوگا،،،اس کے علاوہ سٹاک مارکیٹ اور ٹیکس معاملات سے نیب کے اختیارات ختم کرنے اور سرکاری ملازمین کی جائیدادیں منجمد کرنے کے اختیارات ختم کرنے کی تجویز بھی مسودے میں شامل ہے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.