نہ رہےگا بانس ، نہ بجے گی بانسری

سپیکرسندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے نہ رہےگا بانس اور نہ بجے گی بانسری کے محاورے کو سچ کردکھایا،،،اسمبلی اجلاس کےدوران کئی حکومتی اور اپو زیشن اراکین نے کتوں کے کاٹنے کے واقعات میں اضافے پراظہارِتشویش کیا۔ایوان کی کارروائی کے دوران پی ٹی آئی کی خاتون رکن ڈاکٹر سیما ضیا نےکتے کے کاٹے کے واقعات میں اضافے پرقرارداد بھی جمع کرائی جومنظور کرلی گئی۔ان کا کہنا تھا کہ ہسپتالوں میں کتے سے کاٹے کی ویکیسن دستیاب نہیں جس کے باعث عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے۔
اس موقع پرپی ٹی آئی رکن اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا کہ شہرقائد آوارہ کتوں کے نرغے میں ہیں اور اس وقت کراچی میں ایک لاکھ کتے موجود ہیں،،حکومت کو اس طرف توجہ دینی چاہئے،، اس پر اسپیکر آغا سراج درانی نےمنفرد تجویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ کیوں نہ آوارہ کتوں کو چین اور فلپائن ایکسپورٹ کردیاجائے۔سپیکرسندھ اسمبلی نےتوتجویزدےدی لیکن کیا انہوں نے تجویز سے پہلے کتوں سےاس بارے میں رائے لی ہے؟؟؟،،،کیونکہ یہ کتےلاکھ آوارہ ہی سہی لیکن ہیں تومحب وطن پاکستانی۔ اور کہیں وہ بھونکنے کے بجائے سڑکوں پر یہ گانا نہ گاتے پھریں۔۔۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.