نجی اینکرمریدعباس کے قتل کی تحقیقات شروع

ڈیفنس خیابان بخاری میں فائرنگ سے جاں بحق نجی ٹی وی کے اینکرمرید عباس اور دوست خضرحیات کے قتل کی تحقیقات شروع، واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظرعام پر آگئی،جس میں مسلح ملزم عاطف کو عمیر نامی شخص کے ساتھ عمارت میں جاتے اور تین منٹ بعد واپس آتے دیکھا جاسکتا ہے جبکہ 30 منٹ بعد مرید عباس کو ان کی اہلیہ لفٹ کے ذریعے نیچے لیکر آئیں، واردات کے بعد عمیر نامی شخص کو بھی فرار ہوتے دیکھا گیا۔
پولیس نے ملزم عاطف کی گاڑی تحویل میں لیکرگولیاں بھی برآمد کرلیں اور واردات کی منصوبہ بندی ہونے کا شبہ بھی ظاہر کردیا،قاتل عاطف زمان نے ایک ایک کرکے سب کو بلا رکھا تھا۔
ساٹ پولیس آفیسر ایس ایچ او تھانہ درخشاں
پولیس کے مطابق ملزم عاطف نے نجی ٹی وی کےاینکر مرید کو آفس بلا کرقتل کیا، جبکہ اس کےدوست خضر کو آفس سے باہر بلاکر قتل کیا گیا،پولیس ذرائع کے مطابق واردات میں استعمال پستول کا لائسنس ملزم عاطف کے بھائی کے نام ہے جس کی تلاش جاری ہے۔
مقتولین کی پوسٹمارٹم رپورٹ بھی جاری کردی گئی،، ایم ایل او جناح ہسپتال کے مطابق مرید عباس اورخضرحیات کی موت سینے پر گولیاں لگنے سے ہوئیں۔
پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو اور مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نےٹوئٹر پیغامات میں اینکر مرید عباس کے قتل کی شدید مذمت کی ۔بلاول بھٹو کا کہنا تھا کسی کو بھی قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ صحافیوں کے تحفظ کے لیے جامع اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔
پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور نے اینکر پرسن مرید عباس کے قتل پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ خاندان اور نجی ٹی وی کی انتظامیہ کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔ انہوں نے دعاکرتے ہوئے کہا اللہ تعالیٰ مرحوم کو اپنی جوار رحمت میں جگہ دے۔
قتل ہونے والے اینکر مرید عباس اور خضرحیات کی کراچی میں نماز جنازہ اداکی گئی، جس کے بعد ان کی میت کو آبائی علاقے روانہ کردیاگیا،
دوسری جانب ملزم عاطف زمان نے پولیس کو ابتدائی بیان ریکارڈ کروادیا ہے، تفتیشی ذرائع کے مطابق ملزم نے کہا ہے کہ اپمورٹڈ ٹائر کا کاروبار کرتاہوں اور ساتھیوں کی جانب سے بلیک میل کیا جاتا تھا جس سے تنگ آکر دونوں کو قتل کیا،پولیس حکام کہتے ہیں کہ بیان حتمی نہیں، ملزم کی حالت بہتر ہونے پر تفصیلی بیان لیا جائے گا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.