مودی سرکار ہٹ دھرمی سے باز نہ آئی

پاکستان اوربھارت کی جانب سےکشمیرکے آر پار اپنے کو ملانے کیلئے چلائی جانے والی سرینگرمظفرآباد بس سروس چار ماہ کا طویل عرصہ گزرنے کےباوجود بند ہے ۔ آئندہ ہفتے 8 جولائی کو اس بس سروس کی بحالی کو فیصلہ کیا گیا تھا لیکن مودی سرکار نے ایک مرتبہ پھر حیلے بہانوں کا سہارا لیتے ہوئے بس سروس بحال کرنے سے انکار کردیا ہے
بھارتی حکومت کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے آرپار کے کشمیریوں کی اپنے پیاروں کے ہاں آنے جانے کی خوشیاں مانند پڑ گئی ہیں جبکہ تجارت سے منسلک ہزاروں افراد چار ماہ سے بے روزگاری کا شکار ہیں۔
اس سے قبل بھارتی حکام نےچوبیس جون کو بھی بس سروس بحال کرنے سے انکارکر دیا تھا۔ سرینگر پاسپورٹ آفس نے موقف اختیار کیا کہ لائن آف کنٹرول کو ملانے والے چکوٹھی اوڑی امن برج کی مرمت کا کام جاری ہے جس کے باعث بس سروس بحال نہیں کی سکتی

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.