مودی سرکارکی مقبوضہ وادی میں ریاستی دہشتگردی

وزیراعظم عمران خان نے یہ بات پاکستان کے دورے پر آئے امریکی سینیٹرز سے ملاقات کے دوران کہی، انہوں نے مسئلہ کشمیر پر تعاون کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ مودی نے بھارت کا چہرہ پوری دنیا میں تبدیل کر دیا ہے، یہ وہ بھارت نہیں جیسے میں جانتا تھا۔
انہوں نے امریکی سینیٹرز پر واضح کیا کہ میں ہمیشہ سے معاملات پرامن طریقے سے حل کرنا چاہتا تھا لیکن ان حالات میں انڈین وزیراعظم نریندر مودی سے بات نہیں کر سکتا کیونکہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کر رہا ہے۔ امریکی سینیٹرز کیساتھ ملاقات میں افغان امن عمل پر بھی تفصیلی گفتگو کی گئی۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ طالبان چاہتے ہیں کہ امن ہو جبکہ امریکا بھی چاہتا ہے کہ افغانستان میں امن ہو۔ افغان امن عمل پر مرحلہ وار بات چیت ہونی چاہیے، اس موقع کو ضائع نہیں کرناچاہیے۔
وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کرنے والے امریکی سینیٹرز نے انہیں یقین دہانی کرائی کہ وہ مسئلہ کشمیر اور افغان امن عمل آگے بڑھانے پر زوردیں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.