ملک میں بڑھتی مہنگائی اور حکمران جماعت کی ناقص کارگردگی

حکومت کی چھٹی کرنے کا مشن ،،، جمیعت علمائے اسلام نے 27 اکتوبر کو آزادی مارچ کراچی سے شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا جس کا سہراب گوٹھ سے براستہ سپرہائی وے آغاز کیا جائے گا۔
حیدرآباد ڈویژن کے جلوس سپرہائی وے پرآزادی مارچ میں شامل ہوں گے، میرپورخاص ڈویژن کی ریلیاں نوابشاہ سےآزادی مارچ میں شامل ہوں گی، مارچ کے شرکا 27 اکتوبر کو سکھر میں قیام کریں گے۔ جہاں پیپلز پارٹی ان کا استقبال کرے گی ،، جس کا اعلان بلاول بھٹو پہلے ہی کر چکے ہیں ،،
واضح رہے کہ مولانا فضل الرحمان نے اسلام آباد کی جانب آزادی مارچ کا اعلان کر رکھا ہے، مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کر سکیں بلاول حمایت کا اعلان تو کرتے ہیں لیکن مارچ میں شامل نہیں ہوتے مسلم لیگ ن بھی شدید اختلافات کا شکار ہے، نوا زشریف مولانا کو آزادی مارچ میں شرکت کے لئے خط لکھ دیتے ہیں تو شہباز شریف قمر درد کا بہانہ بنا کر نواز شریف سے ملنے جیل نہیں جاتے.

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.