پاکپتن اراضی کیس،جے آئی ٹی نےنوازشریف کوذمہ دارقراردیدیا

0

چیف جسٹس میاں ثاقب نثارکی سربراہی میں بنچ نے پاکپتن دربار اراضی کیس کی سماعت کی،،،جے آئی ٹی نے زمین منتقل کرنے کے احکامات میں نوازشریف کوذمہ دارقراردیدیا۔دوران سماعت چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ زمین کی الاٹمنٹ کس نے کی تھی؟سربراہ جے آئی ٹی نے بتایا کہ زمین الاٹمنٹ سابق وزیراعلیٰ پنجاب نوازشریف نے کی تھی،چیف جسٹس نے کہا کہ وزیراعلیٰ نے کس اختیار کے تحت زمین الاٹ کردی،1986 میں وزیراعلیٰ نوازشریف تھے ،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ نوازشریف کدھر ہیں۔
نواز شریف کے وکیل منور دوگل نے کہا کہ نواز شریف نے جواب دیا تھا کہ انہوں نے ایسا نہیں کیا۔جس پر چیف جسٹس نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ آپ شاہ سے زیادہ شاہ کے وفادارکا کردار ادا کر رہے ہیں۔ایسا نہ ہو ہم اینٹی کرپشن کو پرچہ درج کرنے کا کہہ دیں۔ سربراہ جے آئی ٹی نے عدالت کو بتایا کہ نوازشریف کے سیکرٹری نے تسلیم کیا ہے کہ انہوں نے زمین الاٹمنٹ کے احکامات دیئے تھے
سپریم کورٹ نے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب نواز شریف اور پنجاب حکومت سے جواب طلب کر لیااور ہدایت کی کہ جواب دو ہفتوں میں سپریم کورٹ میں جمع کرایا جائے۔
پاکپتن میں دربار کے گرد اوقاف کی زمین کی اراضی کی الاٹمنٹ اور دکانوں کی تعمیر سے متعلق ازخود نوٹس کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف 4 دسمبر کو سپریم کورٹ میں پیش ہوئے تھے۔اس موقع پر نواز شریف نے کہا کہ جے آئی ٹی کا طریقہ کار اچھا نہیں، میرا جے آئی ٹی کے حوالے سے تجربہ اچھا نہیں ہے، جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ ہی کو منصف بنا دیتے ہیں، آپ اس معاملے کی تحقیقات کر کے خود ہی بتا دیں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: