مقبوضہ کشمیر میں انسانی تاریخ کے بدترین کرفیو کے 193 روز

بھارت نےجنت نظیر وادی کو درد کی تصویر بنا ڈالا، کرفیو اور لاک ڈاؤن 187ویںروز بھی ختم نہ ہوا۔ دنیا کی سب سے بڑی جیل میں قید کشمیری مسلسل ظلم وستم سہنے پرمجبور ہیں۔وادی میں سکول،کالج اورکاروباری مراکز بند ہیں۔ پبلک ٹرانسپورٹ بھی نہ ہونے کے برابر ہے۔چپے چپے پر بھارتی فوجی تعینات ہیں ۔بھاری سپریم کورٹ کے حکم کے باوجود تا حال موبائل فون اورانٹرنیٹ سروس بحال نہ ہو سکی۔
کشمیر میں انسانی تاریخ کے بدترین کرفیو، شدید سردی اور برف باری کے باعث مظلوم کشمیریوں پر عرصۂ حیات تنگ ہوچکا ہے۔ مسلسل کرفیو کے دوران عوام اپنے گھروں میں محصور ہیں جبکہ خوراک اور زندگی بچانے والی ادویات کی عدم دستیابی اور ہسپتالوں میں مریضوں کے عدم علاج کے باعث مظلوم کشمیریوں کی شہادتوں کا سلسلہ ہر روز جاری ہے جبکہ سرچ آپریشن کے نام پر بھارتی فوج بھی نہتے کشمیریوں کے خون سے ہولی کھیل رہی ہے۔
دوسری جانب کشمیری نوجوانوں،حریت رہنماؤں اور بھارت نواز سیاستدانوں کو بھی قابض بھارتی فوج نے بڑی تعداد میں گرفتار کرکے یا تو جیلوں میں ڈال دیا ہے یا انہیں نظر بند کردیا گیا ہے۔
شاید آپ یہ بھی پسند کریں

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: