مقبوضہ کشمیرمیں لاک ڈاؤن کا 43 واں روز

مقبوضہ کشمیر میں مسلسل 43ویں روز بھی کرفیو برقرار ہے اور مواصلات کا نظام مکمل پر معطل ہے،قابض انتظامیہ نے ٹیلی فون سروس بند کررکھی ہے جبکہ ذرائع ابلاغ پرسخت پابندیاں عائد ہیں۔جنت نظیر وادی مقبوضہ کشمیر کی سڑکیں سنسان،دکانیں بند، کاروباری مراکز پر تالے پڑے ہیں۔ وادی میں مسلسل کرفیو کے باعث کاروبار زندگی درہم برہم، گلیوں اورسڑکوں پر بھارتی فوج کا گشت جبکہ گھروں کے باہر بھی فوجی تعینات ہیں ،گھروں میں محصورافراد کو اپنے رشتہ داروں کے جنازے تک پڑھنے کی بھی اجازت نہیں۔مظالم اوربندشوں کےباوجود بھارتی فورسز کشمیریوں کا جذبہ آزادی دبانے میں ناکام ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق وادی میں روزانہ بیس کے قریب مظاہرے کئے جاتے ہیں۔ پانچ اگست سے وادی میں 722 احتجاجی مظاہرے کیے جا چکے ہیں۔ادھرمقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا فیصلہ بھارتی سپریم کورٹ میں ایک بار پھر چیلنج کردیا گیا، جموں کشمیر پیپلز کانفرنس نے سپریم کورٹ میں آرٹیکل تین سو ستر کی منسوخی کیخلاف پٹیشن دائر کی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.