مقبوضہ کشمیرمیں بدترین ملٹری لاک ڈاؤن کا214 واں روز

0

بھارت کے غاصبانہ قبضے اور ریاستی دہشت گردی نے جنت نظیر وادی کے باسیوں کی زندگی جہنم بنا ڈالی، وادی میں کرفیو اور ملٹری لاک ڈاؤن کو 214 ہوگئے۔ کاروبار اور تعلیمی ادارے بند پڑے ہیں، کشمیری معیشت ٹھپ ہوچکی ہے۔ ذرائع نقل وحمل اور ہر طرح کے مواصلاتی رابطے تا حال منقطع ہیں،کشمیری گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔
قابض بھارتی فوج نے کشمیریوں کے لیے سانس لینا بھی مشکل کردیا ہے، وادی میں کھانے پینے کی چیزوں، ادویات اور دیگر ضرورت کی اشیاء کی شدید قلت کے باعث قحط کی صورت حال پیدا ہو گئی ہے۔دوسری جانب کشمیری رہنماؤں، نوجوانوں سمیت بچے بھی جیلوں میں قید ہیں،،،کشمیریوں کو نماز جمعہ مساجد میں ادا کرنے کی بھی اجازت نہیں۔
بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں گزشتہ برس5 اگست کو تحریک آزادی کی صدا کو دبانے کی ناکام کوشش کرتے ہوئے قانون میں تبدیلی کی اور کشمیریوں پر ظلم و ستم کے نئے دور کا آغاز کیا۔ تاہم انسانیت سوز مظالم کے باوجود کشمیری حق خودارادیت کے حصول کے لیے پرعزم ہیں۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: