مقبوضہ وادی کی خصوصی حیثیت ختم،بھارت ردعمل سے خوفزدہ

بھارت کشمیر کی خصوصی حیثیت کرنے کے بعد سے خوفزدہ،،ردعمل سے بچنے کیلئے ہر حربہ استعمال کرنے لگا،آرٹیکل 370اور 35اے کے خاتمے کے بعد پانچویں روز بھی وادی میں کرفیو نافذ،جگہ جگہ ہزاروں فوجی تعینات،سڑکوں پر صرف آرمی کی گاڑیاں ہی گشت کرتی نظر آنے لگیںشہریوں کو باہر نکلنے کی اجازت نہیں،خاردار تاروں کی وجہ سے پیدا چلنا بھی محال ہو گیا،کشمیری طلبا کا کہنا ہے کہ وادی کو تاریخ کے تاریک وقتوں میں دھکیل دیا گیا ہے،لوگوں کو جب بھی موقع ملا وہ اُبل پڑیں گےدوسری جانب مودی سرکار نے حریت رہنماؤں سمیت سینکڑوں کشمیریوں کو گرفتار کر لیا ہے،جبکہ کئی رہنماؤں کو نظر بند اور لوگوں کو گھروں میں محصور کر دیا ہےادھر مقبوضہ وادی کے علاقے کارگل میں بھی کشمیریوں کا احتجاج جاری ہے،جہاں لوگوں نے مودی سرکار کیخلاف نعرے بازی کی،اور پولیس نے شیلنگ اور لاٹھی چارج سے نہتے کشمیریوں کو زخمی کر دیا

شاید آپ یہ بھی پسند کریں
1 تبصرہ
  1. Amber Shahzadi کہتے ہیں

    Indian government is now control their limits

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.