مقبوضہ وادی میں کربلا کا منظر!!!بچے بھوکےپیاسے ہیں،وزیر خارجہ

کشمیر جل رہا ہے!!،،کرفیو دوسرے ماہ میں داخل ہوچکا ہےاس پر یورپی ممالک کی آنکھوں پر پٹی کیوں ہے،،،وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے سوئس ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے بھارتی مظالم کو بے نقاب کردیا بولے، یواین اپنی سیاسی وجوہات کی بنا پرکشمیرپرآوازنہیں اٹھا رہی،،بچے اسکول نہیں جارہے کھانے پینے کو بھی کچھ نہیں ہے زندگی کا نظام بند ہوچکا ہےوزیرخارجہ کا کہنا تھا مقبوضہ کشمیر میں صورتحال انتہائی تشویشناک ہے،وادی میں ذرائع مواصلات پرپابندی کی وجہ سے حقائق سامنے نہیں آرہے۔بھارت نے 5 اگست کو جو اقدامات اٹھائے وہ سب کے لیے حیران کن تھے، بھارتی اقدامات ناصرف اُن کے اپنے قوانین بلکہ یو این چارٹر، سلامتی کونسل کی قرارداروں اور بین الاقوامی قوانین کے بھی خلاف تھے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ یورپی یونین کے کئی ممالک اس صورتحال کی نزاکت کو سمجھتے ہیں لیکن کئی یورپی ممالک اپنی سیاسی وجوہات کی بناء پر کشمیر کے معاملے پر آواز نہیں اٹھا رہے۔ بھارت کو بین الاقوامی قوانین اور اقوام متحدہ کی قرارداروں پر عملدرآمد کرنا ہو گا، بھارت فوری طور پر مقبوضہ کشمیر سے کرفیو اٹھائے اور لوگوں کو جینے کا حق دے

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.