لاہورہائیکورٹ نے نیب کورانا ثنااللہ کوہراساں کرنے سے روک دیا

0

لاہورہائیکورٹ میں مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثنااللہ کی نیب تحقیقات کیخلاف درخواست پر سماعت ہوئی،جسٹس علی باقر نجفی کی سربراہی میں 2 رکنی بنچ نے سماعت کی،وکیل رانا ثنااللہ نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ پہلے میرے موکل پر منشیات اوراب کرپشن کے ذریعے اثاثےبنانے کا الزام لگایا جا رہا ہے اور ضمانت پر رہائی کے بعد اب نیب نوٹس دے رہا ہےجبکہ2 ریاستی ادارے اثاثوں پر انکوائری نہیں کر سکتے۔
عدالت نے استفسار کیا کہ نیب بتائے کہ ایک ہی اثاثے کی 2 ادارے کیسے تفتیش کرسکتے ہیں اس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ یہ انکوائری راناثنا کی رہائی سے پہلے سے چل رہی تھی۔ جسٹس علی باقر نجفی نے کہا کہ اے این ایف اورنیب کے اختیارات مختلف ہیں،نیب اپنے اختیارات سے تحقیقات کررہاہے توغلط کیاہے؟
رانا ثنا اللہ نے کہا کہ نیب والے چائے پربلاتے ہیں اورگرفتارکرلیتے ہیں،عدالت نے کہا کہ چائے پرتوابھی نندن کوبھی بلایاتھا، جج کے ریمارکس پرکمرہ عدالت قہقہوں سے گونج اٹھا۔
عدالت نےکہاکہ راناثنااللہ کوگرفتاری کاخدشہ ہےتوضمانت دائرکرسکتے ہیں،عدالت نےنیب کوراناثنااللہ کوہراساں کرنےسے بھی روک دیا،عدالت نے نیب سے جواب طلب کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ کو ہراساں کرنے سے روک دیا اورسماعت 25 مارچ تک ملتوی کردی۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: