قوم کواندھیروں سےنکالنےکی دعویدارحکومت کی اندھیرنگری

سابق دورِ حکومت میں بڑی مشکل سے قابو میں آنے والا لوڈشیڈنگ کا جِن ایک بار پھربوتل سے نکل آیا جس کے باعث پارلیمنٹ ہاؤس اورسپریم کورٹ سمیت اہم عمارتوں سےبجلی غائب ہوچکی ہے۔ حساس علاقوں میں لوڈشیڈنگ سے متعلق اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی کے ترجمان کا موقف ہے کہ ٹرانسمیشن لائنز پر ٹرپنگ کی وجہ سے آئیسکو ریجن میں بجلی کی طلب اور رسد میں فرق آگیا ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ بجلی کی فراہمی میں کمی کو پورا کرنے کیلئے لوڈ مینجمنٹ کیا جارہی ہے اور مسئلے پر جلد قابو پالیا جائے گا۔
ترجمان کےمطابق آئیسکوکےپانچوں سرکلزمیں مختلف دورانئےکی لوڈ مینجمنٹ کی جارہی ہےجبکہ بجلی کی طلب اور رسد میں فرق آنے سے شارٹ فال 2800 میگاوا ٹ تک جا پہنچاہے۔دوسری طرف ذرائع وزارت توانائی کے مطابق بجلی کی پیداوار طلب سے زیادہ ہے لیکن ٹرانسمیشن لائنز کی ٹرپنگ کی وجہ سے ترسیلی نظام میں خلل آیا ہے۔ خیال رہے کہ بجلی کی ترسیل کی ذمہ دارکمپنیاں لیسکو، آئیسکو، میپکو اور فیسکو طویل لوڈشیڈنگ کر رہی ہیں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.