فرانس میں کرونا کے باوجود بلدیاتی انتخابات کا انعقاد

0

فرانس میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں میں اضافے کے باوجود بلدیاتی انتخابات منعقد ہوئے ،،، بلدیاتی الیکشن دو مرحلوں پر مشتمل ہے ،،، پہلے مرحلے میں جان لیوا وائرس کے خوف سے بہت کم ٹرن آؤن رہا اور ووٹرز کی بڑی تعداد نے گھروں پر رہنا ہی بہتر سمجھا۔ پہلے مرحلے میں رائے شماری 45 فیصد تک رہی جو 2014 کے آخری انتخابات کے مقابلے میں تقریبا 20 فیصد کم تھا
بلدیاتی انتخابات کے موقع پرحکومت کی جانب سے ووٹرز کی حفاظت کیلئے اچھے انتظامات دیکھنے میں آئے،،،،عملے نے ہاتھوں پر دستانے پہن رکھے تھےاس کے علاوہ ووٹرز کو داخلی دروازوں پر سینیٹائزر فراہم کیا گیا اور ووٹرز کے درمیان مناسب فاصلہ رکھا گیا جبکہ ووٹنگ کے دوران بوتھ کو بار بار صاف کیا جاتا رہا ۔
گرین امیدواروں نے لیون ، سٹراسبرگ اور گرینوبل سمیت ملک کے متعدد بڑے شہروں میں کامیابی حاصل کی تاہم دائیں بازو کی جماعت بہت کم سیٹیں حاصل کرپائی جبکہ پیرس کی سوشلسٹ میئر این ہیڈلگو کو بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں قدامت پسند حریف رچیڈا دتی پر سبقت حاصل ہے جبکہ صدر ایمانوئل میکرون کی لا ریپبلک این مارچے پارٹی کی اگنیس بوزین تیسرے نمبر پر ہیں۔
فرانس کے بلدیاتی الیکشن کا دوسرا دور آئندہ اتوار کو ہوگا تاہم کرونا وائرس کے باعث مقتدر سیاسی حلقوں نےحکومت سے انتخابی عمل کو روکنے کا مطالبہ کیا ہے،،دوسری جانب وزیر اعظم ایڈورڈ فلپ کا کہنا ہے کہ بلدیاتی انتخابات ملتوی کرنے کا فیصلہ طبی ماہرین صلاح مشورے کے بعد کیا جائے گا ۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: