صحافی عزیز میمن قتل کی تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی تشکی

0
سندھ حکومت نے صحافی عزیز میمن کے قتل کی جانچ کیلئے جے آئی ٹی تشکیل دے دی جے آئی ٹی ایڈیشنل آئی جی ولی اللہ کی سربراہی میں تشکیل دی گئی جے آئی ٹی میں ایس ایس پی بینظیر آباد تنویر حسین تنیو،ایس ایس پی نوشہرو فیروز شامل مختلف اداروں کے افسران بھی جے آئی ٹی کے ممبر ہوں گے۔ جے آئی ٹی ضلع نوشہروفیروز کے شہر محراب پور میں گزشتہ ماہ مبینہ طور پر قتل ہونیوالے نجی ٹی وی کے رپورٹر عزیز میمن کی موت کی تحقیقات کرے گی۔
سندھ پولیس نے محراب پور کے صحافی عزیز میمن کی موت کو طبعی قرار دے دیا ہے۔ ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پولیس حیدرآباد ریجن ولی اللہ نے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کو بتایا کہ میڈیکل رپورٹ میں صحافی کے قتل کا کوئی ثبوت نہیں ملا۔ ایڈیشنل آئی جی کا کہنا تھا کہ نجی ٹی وی کے رپورٹرعزیز میمن کی موت طبعی ہے، تفتیش کیلئے کیمرہ مین حراست میں ہے۔
دوسری جانب مقتول صحافی عزیز میمن کے بھائی حفیظ میمن نے قائمہ کمیٹی میں پیش کی گئی رپورٹ مسترد کرتے ہوئے کہا کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ کا ابھی صرف ایک حصہ آیا ہے،حتمی رپورٹ سے قبل موت طبعی کیسے قرار دے دی گئی؟ مقتول صحافی کے بھائی کے مطابق حتمی رپورٹ آنے سے قبل عزیز میمن کا قتل طبعی موت قراردینا ایک سازش ہے،عزیز میمن کو باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت قتل کیا گیا۔

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: