شیخ رشید کوسپریم کورٹ میں کڑے سوالات کا سامنا

0

سپریم کورٹ میں ریلوے خسارہ کیس کی سماعت کے دوران شیخ رشید کوسپریم کورٹ میں کڑے سوالات کا سامنا کرنا پڑا۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے کہا کہ70 لوگ جل گئے بتائیں کیا کارروائی ہوئی؟آپ کا سارا کٹا چٹھا تو ہمارے سامنے ہے۔ریل میں 70 افراد کے جلنے کے واقعے پر تو آپ کو استعفیٰ دے دینا چاہیے تھا۔
شیخ رشید نے بتایا کہ 19 لوگوں کے خلاف کارروائی کی گئی ۔چیف جسٹس گلزار احمد نے استفسار کیا کہ گیٹ کیپر اور ڈرائیورز کو نکالا، بڑوں کو کیوں نہیں نکالا؟ سب سے بڑے تو آپ خود ہیں؟مزید کہا ریلوے کو بند کر دیں، جیسے ریلوے کا ادارہ چلایا جا رہا ہے ہمیں ایسے ریلوے کی ضرورت نہیں۔ شیخ رشید نے کہا کہ عدالت مہلت دے، معیار پر پورا نہ اترا تو استعفیٰ دے دوں گا۔
چیف جسٹس نے شیخ رشید کو کہا کہ پرانے رونے نہ روئیں، آپ کا ادارہ سب سے نا اہل ہے،،، ریلوے کے پاس نہ سگنل ہے، نہ ٹریک اور نہ بوگیاں، ادارے میں لوٹ مار مچی ہوئی ہے، ریلوے افسران جس کو چاہتے ہیں زمین دے دیتے ہیں
سپریم کورٹ نے شیخ رشید سے ریلوے کو منافع بخش ادارہ بنانے کے لیے 2 ہفتوں کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے پلان طلب کر لیا،عدالتِ عظمیٰ نے حکم دیا کہ سپریم کورٹ نے ایم ایل 1 کی منظوری نہ ہونے پر وفاقی وزیر اسد عمر کو بھی آئندہ سماعت پر بلا تے ہوئےسماعت 12 فروری تک ملتوی کر دی

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: