سیلاب کا خدشہ،وزیراعلیٰ عثمان بزدار کی زیر صدارت اجلاس

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے زیر صدارت اجلاس میں بھارت کی جانب سے دریائے ستلج میں پانی چھوڑے جانے کے بعد کی صورتحال، لوگوں کے انخلاء کیلئے اقدامات اور امدادی سرگرمیوں کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا دریا کے بیڈ سے لوگوں کا انخلاء یقینی بنایا جائے، سیلابی ریلے سے قبل لوگوں کو بروقت محفوظ مقامات پر منتقل کیا جائے، امدادی کیمپس میں تمام ضروری اشیاء کی دستیابی یقینی بنائی جائے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا ریلیف کیمپس میں ضروری اشیاء کی قلت نہیں ہونی چاہیے۔ انہوں نے صوبائی وزراء، آبپاشی اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ کو دورے کرکے صورتحال کا جائزہ لینے کی ہدایت کردی اور کہا سیکرٹری آبپاشی اور ڈی جی پی ڈی ایم اے بھی موقع پر جا کر امدادی سرگرمیوں کو مانیٹر کریں۔ صورتحال کو خود مانیٹر کر رہا ہوں، صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے کسی بھی ضلع کا خود دورہ کروں گا۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار کا کہنا تھا عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لئے ضروری انتظامات مکمل ہونے چاہئیں، وفاقی و صوبائی ادارے قریبی رابطہ رکھیں۔ پانی کی آمد و اخراج کو مسلسل مانیٹر کیا جائے۔ ادویات، ویکسینیشن، جانوروں کیلئے چارے اور ونڈے کا بھی بندوبست کیا جائے۔ ادھر وزیراعلیٰ پنجاب کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ بھارت نے بغیر کسی اطلاع کے دریائے ستلج میں پانی چھوڑا ہے، گنڈا سنگھ والا پر کل ایک لاکھ کیوسک سے زائد پانی گزرنے کا امکان ہے، قصور سمیت دیگر اضلاع میں 81 ریلیف کیمپس قائم کر دیئے گئے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.