سال 2018 دنیا بھر میں قدرتی آفات کی زدمیں رہا

زلزے سیلاب اور سونامی،، قدرتی آفات کی وجہ سے انڈونیشیا میں اس سال سب زیادہ تباہی ہوئی،،اگست میں جزیرہ “لیم واک” میں چھ اعشاریہ 9 شدت کے زلزلے سے 5سو افراد موت کے منہ میں چلے گئے جبکہ 15 سو سے زائد زخمی ہوئے،،،
ستمبر میں صوبہ “سولوویسی” میں سات اعشاریہ پانچ شدت کے زلزلےاورسونامی سے 2ہزار افراد موت کی وادی میں چلے گئے جبکہ4 ہزار4سو سے زائد افراد زخمی ہوئے،،،اسی سال انڈونیشیا کے جزیرے سماٹرہ میں ایک اور بڑا تباہ کن واقع رونما ہوا،،، آبنائے سندا کے ساحلی علاقے میں آتش فشاں پھٹنے کے بعد آنے والے سونامی کے نتیجے میں کم از کم 281 افراد ہلاک اور 800 سے زائد زخمی ہوگئے۔

کیلی فورنیا کے جنگلات میں آگ نے شدید تباہی مچاہی،،،اس قدرتی آفت کے نتیجے میں 86 افراد ہلاک جبکہ 18ہزار عمارتیں تباہ ہوگئیں،،، جبکہ اس آگ پر کئی دنوں تک قابو نہ پایا جاسکا
تھائی لینڈ میں سیلابی غاز میں پھنسے 12 بچوں کو اور انکے کوچ کو 17 روزہ ریسکیوآپریشن کے بعدبا حفاظت نکالا گیا،،، نیویارک میں سات اعشاریہ پانچ شدت کے زلزلے سے 160افرادہلاک اوردرجنوں زخمی ہوگئے،،شمالی کوریامیں سیلاب سے پچہترافراد ہلاک،نائجیرہ میں ایک سو ننانوے اور جاپان میں 2سو پچیس افراد لقمہ اجل بنے،،،،

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.